سندھ کے بزرگ وزیراعلیٰ تین دن میں شہر کو صاف کرنے کا اعلان کر کے بھول گئے

سندھ کے بزرگ وزیراعلیٰ تین دن میں شہر کو صاف کرنے کا اعلان کر کے بھول گئے

سندھ حکومت نے کئی سالوں میں کراچی میں جو تجربات کئے اس سے شہر میں کسی بھی قسم کا ایک مربوط سسٹم نہیں بن سکا، کراچی کی سڑکوں پر کچرے اور گندگی کے ڈھیر سندھ حکومت کی 5سالہ کارکردگی کی کہانی سنارہے ہیں ۔ کراچی کے نظام کا ڈھانچہ ہی بگاڑ کررکھ دیاہے۔ضعیف العمر وزیراعلیٰ کے احکامات کو وزراء کے بعد بلدیاتی افسران نے بھی نظرانداز کرنا شروع کردیا، تین دن میں کراچی کو صاف کرنے کے احکامات ہوا میں اڑا دئیے گئے، شہر قائد کی حالت نہ بدل سکی،،، وزیراعلی نے جگہ جگہ غلاظت اور گندگی کا نوٹس تو لیا لیکن پھر خود ہی بھول گئے۔کراچی کی اہم شاہراہوں، سڑکوں گلیوں اور محلوں کی صفائی تاحال شروع نہیں ہو سکی، صدر،اردو بازار کھارادر، رنچھوڑ لائن، گولیمار گلشن اقبال، صفورا گوٹھ، جہانگیر روڈ، پیر کالونی، ناظم آباد، نارتھ ناظم آباد، کیماڑی، لانڈھی، کورنگی، لیاقت آباد، نیو کراچی اور نارتھ کراچی کچرے کے ڈھیروں میں تبدیل ہو گیا۔شہر میں ہر طرف کچرہ ہی کچرہ دکھائی دے رہا ہے جس سے پیدل چلنےوالے افراد سمیت گاڑیوں اور موٹرسائیکل سواروں کو بھی سخت مسائل کا سامنا کرنا پڑرہاہے، بعض مقامات پر کچرے کے لگے ڈھیر سے سڑکیں تک بند ہوگئیں ہیں۔ شہر کی سڑکوں پر دن بدن بڑھتے کوڑا کرکٹ اور کچرے کا ڈھیر اور ا س سے اٹھتی بدبو اور تعفن شہری انتظامیہ کی کارکردگی پر ایک سوالیہ نشان بنی ہوئی ہے۔

Most Popular