اسلام آباد ہائیکورٹ نے حج کرپشن کیس میں سابق وزیر مذہبی امور حامد سعید کاظمی کو باعزت بری کردیا

اسلام آباد ہائیکورٹ نے حج کرپشن کیس میں سابق وزیر مذہبی امور حامد سعید کاظمی کو باعزت بری کردیا

اسلام آباد ہائیکورٹ نے حج کرپشن کیس میں سپیشل جج سینٹرل کے فیصلے کو کالعدم قرار دے دیا، کیس کے مرکزی ملزم اور سابق وزیر مذہبی امور حامد سعید کاظمی کو باعزت بری کردیا گیا، کیس کا فیصلہ اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس، جسٹس محسن اختر کیانی نے سنایا، عدالت نے سابق ڈی جی حج راﺅ شکیل اور آفتاب الاسلام کو بھی بری کر دیا۔ عدالت نے حامد سعید کاظمی کی اپیل میں پندرہ زوز میں کیس کو نمٹانے کی ہدایت کی ہے۔ پاکستانی حاجیوں کیلئے کئے گئے انتظامات میں ہونے والی بدعنوانیوں کے مقدمے میں سپیشل جج سینٹرل نے سابق وزیر مذہبی امور حامد سعید کاظمی اور سابق ایڈیشنل سیکریٹری مذہبی امور آفتاب اسلام کو دو مقدمات میں چھ چھ برس قید اور چودہ کروڑ تیراسی لاکھ روپے جرمانے کی سزا سنائی تھی، تاہم جرمان کی عدم ادائیگی پر ان کی سزا چودہ برس کردی گئی، سپیشل عدالت نے سابق ڈائریکٹر جنرل حج راؤ شکیل کو تین مقدمات میں مجموعی طور پر 18 برس قید کی سزا سنائی تھی جبکہ چودہ کروڑ تیرانوے لاکھ روپے جرمانہ ادا نہ کرنے پر قید کی سزا بیس سال کردی تھی ، حاجیوں کے لیے رہائش کے حصول میں مبینہ بدعنوانی کا معاملہ سنہ 2010 میں پیپلز پارٹی دورِ حکومت میں سامنے آیا تھا اور ان افراد پر عازمین حج کے لیے مہنگے داموں کرائے پر عمارتیں حاصل کرنے کا الزام تھا۔

Most Popular