لاہور میں پنجاب انفارمیشن اور کلچر ڈپارٹمنٹ اور ڈی جی پی آر کے زیراہتمام 2 روزہ تقریب کا انعقاد کیا گیا

لاہور میں پنجاب انفارمیشن اور کلچر ڈپارٹمنٹ اور ڈی جی پی آر کے زیراہتمام 2 روزہ تقریب کا انعقاد کیا گیا

لاہور (ویب ڈیسک) قذافی اسٹیڈیم کے الحمرا ہال میں حکومت پنجاب اور ڈی جی پی آر کے زیراہتمام آل پنجاب ڈرامہ اینڈ مائم کمپیٹیشن کا انعقاد کیا گیا جو دو دن جاری رہا۔بہترین ڈرامے میں پہلی پوزیشن یونیورسٹی آف ویٹرنٹی اینڈ اینیمل سائنسز ، دوسری پوزیشن گورنمنٹ کالج لاہوراور تیسری پوزیشن لاہور کالج فار ویمن نے حاصل کی جبکہ مائم میں پہلی پوزیشن یونیورسٹی آف ویٹرنٹی اینڈ اینیمل سائنسز اور دوسری پوزیشن پنجاب یونیورسٹی نے حاصل کی۔

لاہور میں پنجاب انفارمیشن اور کلچرڈ پارٹمنٹ اورڈی جی پی آر کے زیر اہتمام دو روزہ تقریب کا انعقاد کیا گیا جس میں مختلف یونیورسٹیوں کے طلبہ اور طالبات نے بھر پور شرکت کی۔طلبہ و طالبات کی کاوشوں کو سراہنے کیلیے تقریب میں عتیق احمد،چوہدری آصف پرویز اور ثمن راےُ نے شرکت کی۔ پروگرام کے انعقاد کا بنیادی مقصد معاشرے میں پھیلی ہوئی بے ضابطگیوں اور برائیوں کی عکاسی کرنے کیساتھ امن اور ہم آہنگی کوفروغ دینا ہے۔ڈرامہ کلچرکا مقصد  فن سازی اور فنکاری میں ایک اہم کردار حاصل کرنا ہے۔

تقریب کے آغاز میں نظم و ظبط اور مقابلے کے اصولوں سے طالبات کو آگاہ کیا گیا۔ پہلے روز سب سے پہلے پنجاب یونیورسٹی کے طلبات نے ثقافتی رنگ میں ایک ما ئم پیش کیا جس کی تھیم بتائےبغیر پروگرام پیش کیاگیا ۔ جس میں انھوں نے "کمزور کی آواز" کی معاشرے کے اِس پہلو کی طرف روشنی ڈالی ۔ 

اگلا پروگرم ویٹرنٹی اوراینیمل سائنسز یونیورسٹی کے طلبا نے "پانسا" پر مبنی ایک ثقافتی ڈرامہ پیش کیا جس میں سرکاری اداروں سے لیکر پرا ئو ٹ اداروں کے اعلی افسران اورعہداروں کی کارکردگی پر سوالیہ نشان کھڑاکرتے ہوئے عوام میں اس بات کا شعوراجا گر کرنے کی کوشش کی کہ کرپٹ افسران اور عہدے داروں کی ناجائز خواہشات کو پورا کرنے کی بجا ئے اپنے حق کے لیے آواز اٹھائی جائے ۔
تقریب میں موجود مو سیقاروں نے بھی ثقافتی رنگ کو اپناتے ہوئے کلا سیکل غزلیں پیش کی جس کو طلبہ نے سہراتے ہوئے کہا کہ جدید دور میں اس طرح کی تقریب اور کلا سیکل میوزک سے انسان کواپنی ثقافت سے مزید جوڑتا ہے
آخر میں وقت نیوز ویب ڈیسک کے خصوصی نمائندوں  سے خصوصی  گفتگو کرتے ہوئے دیگر یونیورسٹی کے طالبا و طلبات نے پنجاب انفارمیشن اور کلچر ڈپارٹمنٹ اور ڈی جی پی آر کی اس کاوش کو سراہتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے پروگرام سے نوجوان نسل میں شعور  پیدا کرنا ہے اور ساتھ ہی یہ بھی کہا کہ  جدید دور کی ٹیکنالوجی کے ساتھ ثقافتی ورثے کو بھی ساتھ لے کر چلناایک اچھا عمل ہے 

Most Popular