شاعری کا عالمی دن آج منایا جا رہا ہے۔یوم شاعری کا مقصد شاعری کی اہمیت کو اجاگر کرنا ہے

 شاعری کا عالمی دن آج منایا جا رہا ہے۔یوم شاعری کا مقصد شاعری کی اہمیت کو اجاگر کرنا ہے

جذبات، احساسات اور خیالات کو خوبصورت پیرائے میں ڈھالنے اور دلکش اندازو بیان میں پیش کرنے کا نام شاعری ہے۔ شاعری کا عالمی دن انیس سو ننانوے سے اقوام متحدہ کے زیر اہتمام منایا جاتا ہے،جس کا مقصد ادب کی خوبصورت صنف شاعری کے مطالعے، لکھائی، تعلیم اور اشاعت کو فروغ دینا اور اس کے انقلابی کردار کو اجاگر کرنا ہےشاعری جب خواجہ فرید، بابا بلھے شاہ اور سلطان باہو کی کافیاں کہلائی تو امن اور اسلام کے فروغ کا ذریعہ بنی، اقبال کی نظموں کا روپ لیا تو بیداری انساں کا کام کیا۔ فیض اور جالب کے شعروں میں ڈھلی تو انقلاب کا سامان مہیا کیا اور جب ناصر و فراز کو شاعری نے منتخب کیا تو پیار و الفت کی نئی کونپلوں نے جنم لیا۔ شاعری جب عقیدت کے سفر پر گامزن ہوئی تو حفیظ تائب اور انیس و دبیر منظر عام پرآئے۔ شاعری کے پیچھے چاہے عقیدت کارفرما ہو یا دنیا داری بہرحال یہ سب محبت کے استعارے ہیں اور تسکین کا سامان ہے۔

Most Popular