سندھ اسمبلی سے متصل سرکاری کوارٹرز گرائے جانے پر مکین تیسرے روز بھی سراپا احتجاج ہیں

سندھ اسمبلی سے متصل سرکاری کوارٹرز گرائے جانے پر  مکین تیسرے روز بھی سراپا احتجاج ہیں

کراچی میں سندھ اسمبلی سے متصل کوارٹر کوتین روز قبل مسمار کردیا گیا تھا۔ کوارٹرز کے ملبے میں بچوں کے یونیفارم ، کتابیں اور دیگر سامان دب چکا ہے۔ کوارٹرز گرائے جانے پرمکین سراپا احتجاج ہیں ان کا کہنا ہے کہ انہیں انصاف فراہم کیا جائے اور گھر کے بدلے گھر دیا جائے۔وقت نیوز سےگفتگو میں تحریک انصاف کے رہنما حلیم عادل شیخ کا کہنا ہے کہ بے حس حکمرانوں کے سامنے کلمہ حق کہنا گناہ بن چکا ہے۔ مسمار کئے گئے کوراٹرز کے مکین معصوم بچے سکول نہیں جاسکےسندھ حکومت عوام کو بے وقوف نہیں بناسکتی رکن صوبائی اسمبلی خرم شیر زمان کا کہنا تھا کہ سندھ اسمبلی کے اسپیکر آغا سراج درانی یہاں آئے متاثرین کو دیکھا اور چلے گئے۔ کوارٹرز مسمار کرنے کی مذمت کرتے ہیں۔ خرم شیر زمان کا کہنا تھا کہ تھر میں بچے غذائی قلت سے مر رہے ہیں۔ ہسپتالوں میں دوائیاں دستیاب نہیں یہاں کار پارکنگ اور مساج سینٹرز بنائے جا رہے ہیںِخرم شیر زماناحتجاج کرنیوالے مظاہرین نے پلے کارڈز اٹھا رکھے ہیں جن پر ان کے مطالبات کے حق میں نعرے درج تھے اور انصاف کے حصول کا مطالبہ کیا گیا تھا۔ کیمر امین فرحان کے ساتھ انفاس کھوکھر وقت نیوز کراچی

Most Popular