سپاٹ فکسنگ سکینڈل میں فاسٹ باؤلر محمد عرفان کو ایک سال کے لیے معطل کر دیا گیا

سپاٹ فکسنگ سکینڈل میں فاسٹ باؤلر محمد عرفان کو ایک سال کے لیے معطل کر دیا گیا


پی ایس ایل فکسنگ سکینڈل میں ملوث قومی فاسٹ باؤلر محمد عرفان نے پی سی بی اینٹی کرپشن یونٹ کی چارج شیٹ کا جواب جمع کرا دیا ہے۔ محمد عرفان نے اپنی غلطی تسلیم کرتے ہوئے قوم سے معافی مانگ لی ۔۔ پی سی بی ہیڈکوارٹر لاہور میں عرفان کے ہمراہ پریس کانفرنس کے دوران پاکستان کرکٹ بورڈ کی قانونی ٹیم کا کہنا تھا کہ فاسٹ باؤلر محمد عرفان کو ایک سال کے لیے معطل کر دیا گیا جبکہ وہ چھے ماہ تک کسی قسم کی کرکٹ نہیں کھیل سکیں گے۔۔ محمد عرفان ضابطہ اخلاق کی پابندی کریں اور 10 لاکھ روپے جرمانہ ادا کرنے سمیت پی سی بی کے اینٹی کرپشن لیکچر کا حصہ بنیں گے تو ان کی بقیہ 6 ماہ کی پابندی ختم ہوسکتی ہے۔ اس کے علاوہ پابندی کے دوران وہ ہر قسم کی کرکٹ سے دور رہیں گے اور ان کا سنٹرل کنٹریکٹ بھی معطل رہے گا۔ پریس کانفرنس کے دوران محمد عرفان کا کہنا تھا کہ 14 مارچ کو اسپاٹ فکسنگ کیس میں انہیں معطل کردیا گیا تھا، انہیں دو الگ الگ جگہ پر اسپاٹ فکسنگ کی پیشکش کی گئی تھی لیکن انہوں نے پیشکشیں ٹھکرا دی تھیں، بدقسمتی سے وہ اس کی اطلاع پی سی بی کو نہیں دے پائے جس پر وہ قوم سے معافی مانگتے ہیں, واضح رہے کہ سنٹرل کنٹریکٹ کے تحت محمد عرفان کو ماہانہ 5 لاکھ روپے تنخواہ دی جاتی ہے، اس کے علاوہ وہ آئی سی سی چیمئینز ٹرافی سے بھی باہر ہوگئے ہیں۔۔ دوسری جانب پی سی بی نے واضح کیا ہے کہ اگر تحقیقات کے دوران محمد عرفان مزید کسی معاملے میں ملوث پائے گئے تو ان کی سزا میں اضافہ ہو سکتا ہے

Most Popular