حالیہ مون سون بارشوں نے ملک بھر میں قہر ڈھانا شروع کردیا، پنجاب، آزاد کشمیر، خیبر پختونخوا اور شمال مشرقی بلوچستان سیلاب نے تباہی مچا دی

حالیہ مون سون بارشوں نے ملک بھر میں قہر ڈھانا شروع کردیا، پنجاب، آزاد کشمیر، خیبر پختونخوا اور شمال مشرقی بلوچستان سیلاب نے تباہی مچا دی

پنجاب، آزاد کشمیر، خیبر پختونخوا اور شمال مشرقی بلوچستان میں اٹھارہ جولائی سے شروع ہونے والی بارشوں کے باعث دریاؤں اورندی نالوں میں سیلابی کیفیت پیدا ہوگئی ہے۔ مون سون بارشوں کے بعد ملک کے مختلف دریا بپھرے ہوئے ہیں، دریائے جہلم ، ستلج، کابل اور سندھ میں سیلابی لہریں بےقابو ہوگئیں۔ سندھ کے علاقے گھوٹکی میں پچاس سے زائد دیہات کا زمینی رابطہ منقطع ہوگیا۔ سیکڑوں افراد گھروں میں محصور ہو کر رہ گئے،کوٹ مٹھن کے مقام پر سیلابی پانی میں اضافہ ہوگیا۔شجاع آباد میں سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں زندگی ابھی تک معمول پر نہیں آسکی۔ لیہ میں متاثرہ علاقوں سے نکاسی آب نہ ہونے کے باعث وبائی امراض کا خدشہ پیدا ہوگیا۔ دریائے سندھ میں جتوئی کے مقام پر بھنڈی کورائی، لنڈی پتافی، رام پور سمیت درجنوں موضع جات زیر آب آگئے۔ ہزاروں ایکڑ پر فصلیں پانی میں ڈوب گئیں۔ متاثرہ علاقوں کے مکین کھلے آسمان تلے حکومتی امداد کے منتظر ہیں۔ڈیرہ غازی خان میں بستی بدانی اور بستی کورائی کےدو حفاظتی بند ٹوٹ گئے،جس سے درجنوں دیہات زیرآب آگئے،جب کہ سیکڑوں ایکڑ پرفصلیں بھی تباہ ہوگئیں،راجن پورکے علاقے ہاکسرمیں بند ٹوٹنے سےدوسو گھر اور سیکڑوں ایکڑاراضی پانی کی نذر ہوگئی،روجھان کےکچے کےعلاقے کےلوگوں نےبھی محفوظ مقامات پرجانا شروع کردیا،رحیم یار خان کے علاقے رکن پور میں سیلابی پانی گھروں میں داخل ہو گیا،علاقہ مکینوں نے عید دریا کے بند پر بیٹھ کر گزاری، بھوکے پیاسے متاثرین بے یارومدد گار زندگی گزارنے پر مجبور ہیں، جبکہ ضلعی انتظامیہ صرف کاغذی گھوڑے دوڑانے میں مصروف رہی۔

Most Popular