50 تا 60 ہزار روپے خرچ کرکے شمسی توانائی کی مدد سے بجلی کے بل میں 50 فیصد تک کمی لائی جا سکتی

06 فروری 2018 (11:33)

سولر پینلز کی تنصیب سے بجلی کے بل میں 50 فیصد تک کمی لائی جا سکتی ہے جبکہ 50 تا 60 ہزار روپے کے اخراجات سے شمسی توانائی کی مدد سے سولر پینلز کے ذریعے بجلی پیدا کرکے رات کے اوقات میں 4 تا 6 گھنٹے تک 4 پنکھے اور 8 لائٹس جلائی جا سکتی ہیں۔ این ایچ زبیری نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ ملک میں سولر پینلز کا کاروبار تیزی سے ترقی کر رہا ہے کیونکہ شمسی توانائی سے بجلی پیدا کرکے اخراجات میں نمایاں کمی لائی جا سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ 50 تا 60 ہزار روپے کے اخراجات سے 150 واٹ کے چار سولر پینلز کی تنصیب کی جا سکتی ہے جو دن کے اوقات میں مفت بجلی فراہم کرتے ہیں جبکہ رات کے اوقات میں بھی ان کی مدد سے 4 پنکھے اور 8 لائٹس جلائی جا سکتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سولر پینلز کی تنصیب پر اٹھنے والے اخراجات بل کی بچت کی مد میں تین تا ساڑھے تین سال کے دوران واپس وصول ہو جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سولرل پینل تیار کرنے والی عالمی کمپنیاں 15 تا 25 سال تک کی وارنٹی دیتی ہیں۔ اس طرح صارفین ایک مرتبہ اخراجات کے بعد پندرہ بیس سال تک مفت بجلی کی سہولت سے مستفید ہو سکتے ہیں۔