بھارتی مدارس کے اساتذہ 30 ماہ سے تنخواہ سے محروم، احتجاجی مظاہرہ

Sep 07, 2018 | 14:35

یوم اساتذہ کے موقع پر اتر پردیش کے مختلف اضلاع میں قائم مدارس کے اساتذہ نے دہلی کے جنتر منترچوک پر اکٹھا ہوکر حکومت کیخلاف مظاہرہ کیا۔ مدرسہ ماڈرنائزیشن ٹیچرز ایسوسی ایشن کے زیر اہتمام تنظیم کے صدر اعجاز احمد کی قیادت میں جنتر منتر پہنچنے والے اساتذہ نے کہا کہ حکومت نے تقریبا 30 ماہ سے تنخواہیں نہیں دیں جس کی وجہ سے کئی خاندان بدحالی اور فاقہ کشی کا شکار ہوگیا۔اعجاز احمد نے کہاکہ مدارس میں نیا نصاب نافذکردیا گیا مگر اسے پڑھانے والے ٹیچرز تعینات نہیں کئے۔ ڈی ایم سے لے کروزیر تک سے فریاد کی گئی لیکن 30ماہ بعد بھی ان کے کان پر جوں تک نہیں رینگی۔واضح ہو کہ جدید اسکیم کے تحت ریاست کے سیکڑوں مدار س میں 2زمرے کے اساتذہ کا تقرر کیا گیا ۔ایک گریجویٹ ٹیچر اور دوسرے پوسٹ گریجویٹ ٹیچر۔ جدید مضامین پڑھانے کیلئے اساتذہ کو مرکزی حکومت8ہزار روپے اورریاستی حکو مت کی جانب سے 2ہزار روپے شامل کرکے تنخواہ ادا کی جاتی ہے۔اسی طرح پوسٹ گریجویٹ ٹیچرز کو ریاستی حکومت 3ہزار روپے اور مرکزی حکومت 12ہزار روپے تنخواہ کی مد میں ادا کرتی ہے تاہم مرکزی حکومت سے ادا کی جانیوالی تنخواہ 30ماہ سے نہیں دی گئی۔

مزیدخبریں