پاکستان اور چین نے اسٹریٹجک تعاون پرمبنی شراکت داری کو مزید مستحکم کرنے کے عزم کا اعادہ کیا ہے

Sep 08, 2018 | 14:35

پاکستان کے دورے پر آئے چینی وزیر خارجہ نے وفد کے ہمراہ دفتر خارجہ کا دورہ کیا، اس موقع پر وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے ان کا استقبال کیا، دونوں وزرائے خارجہ کے درمیان ون آن ون ملاقات ہوئی جس میں دو طرفہ باہمی دلچسپی کے امورپر تبادلہ خیال کیا گیا۔ ملاقات میں سی پیک منصوبوں پر کام کی رفتار تیز کرنے اور خصوصی اکنامک زون جلد مکمل کرنے پر بات چیت ہوئی، علاقائی صورتحال خاص طور پر افغانستان بھی اہم موضوع رہا، بھارت اور امریکہ کے درمیان "ٹو پلس ٹو" مذاکرات کے نتائج پر بات چیت کی گئی۔ چین کی طرف سے پاکستان کے زرمبادلہ کے ذخائر میں بہتری کے لئے تعاون پر اتفاق کیا گیا۔پاکستان اور چین کے درمیان وفود کی سطح پر مذاکرات بھی ہوئے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے پاکستانی جبکہ وانگ ژی نے چینی وفد کی قیادت کی۔۔ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے سی پیک موجودہ حکومت کی اولین ترجیح ہے، سی پیک پاکستان کی سماجی اور معاشی ترقی کیلئے اہم ہے، دونوں وزرائے خارجہ نے اسٹریٹیجک تعاون پر مبنی شراکت داری مزید مستحکم کرنے کے عزم کا اعادہ کیا، چین نے پاکستان کی معیشت کے استحکام کیلئے حمایت کا اظہار کیا۔ پاکستان کی جانب سے چین کو اقتصادی راہداری کیلئے عزم کی یقین دہانی کرائی گی۔پاکستان میں نئی حکومت کے ذمہ داریاں سنبھالنے کے بعد یہ کسی بھی چینی اعلیٰ شخصیت کا پہلا دورہ پاکستان ہے۔

مزیدخبریں