ناسا کے خلائی جہاز نے زمین سے 6.12 ارب کلومیٹر کے فاصلے پر تصاویر بنا کر نیا ریکارڈ قائم کردیا

12 فروری 2018 (18:14)

خلائی تحقیقی کے امریکی ادارے ناسا کے خلائی جہاز نیو ہوزائزنز نے کائنات کے زمین سے 6.12 ارب کلومیٹر کے فاصلے پر واقع حصوں کی تصاویر بنا کر نیا ریکارڈ قائم کیا ہے۔اس سے قبل ناسا کے ایک اور خلائی جہاز وائجر ون نے14 فروری 1990ءکو زمیں سے 6.06 ارب کلو میٹر کے فاصلے پر تصاویر بنا کر ریکارڈ قائم کیا تھا۔نیو ہوزائزنز پلوٹو کے پاس سے گذر کر آگے جانے والا پہلا خلائی جہاز ہے۔اس نے 5 دسمبر 2017ءکو ہمارے نظام سمشی کے آخری کنارے کے قریب موجود ستاروں کے ” وشنگ ویل“ نامی گروپ کی تصاویر بنائی ہیں۔2006 ءمیں روانہ کیا جانے والایہ خلائی جہاز روزانہ گیارہ لاکھ کلومیٹر کا سفر طے کرتے ہوئے زمیں سے دور جا رہا ہے۔اس سفر کے دوران یہ جس ماحول سے گذرتا ہے اس میں موجود پلازما، گرد اور قدرتی گیسوں کی مقدار کا مسلسل ریکارڈ تیار کرتا ہے۔یہ پلوٹو کے پاس سے گذرنے والا پہلا خلائی جہاز ہے۔ یہ یکم جنوری 2019کو کوپر بیلٹ کے پاس سے گذرے والا پہلا خلائی جہاز بھی ہو گا۔یہ خلائی جہاز زمیں سے انتہائی دور سے ہمارے نظام شمسی کی تصاویر بھی بنا کر ارسال کرے گا۔