پارٹی کو اب شخصیات کے بجائے جمہوری انداز میں چلانے کی کوشش کریں گے۔ ,خالد مقبول صدیقی

12 فروری 2018 (22:40)

بہادرآباد کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بیرسٹر فروغ نسیم نے کہا کہ رابطہ کمیٹی نے دوتہائی اکثریت سے فیصلے کیے ہیں۔ ایم کیوایم پاکستان کے دو دھڑے نہیں ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ متحدہ قومی موومنٹ فاروق ستار کے نام پر رجسٹرڈ نہیں، پارٹی آئین کے مطابق ٹکٹ دینے کا اختیار کنوینر کے پاس نہیں۔ رابطہ کمیٹی جسے چاہے پارٹی ٹکٹ دے سکتی ہے۔ فاروق ستار اگر قانونی کارروائی کرنا چاہتے ہیں تو ضرور کریں,اس موقع پرایم کیو ایم پاکستان کے نومنتخب کنوینر خالد مقبول صدیقی کا کہنا تھا کہ موجودہ صورتحال افسوسناک ہے، وہ ہمیں نکالیں یہ ہم انہیں نکالیں دونوں صورتوں میں نقصان ہمارا ہی ہے۔ کوشش ہے کہ ایم کیو ایم کو شخصیات کے بجائے اب جمہوری انداز میں چلایا جائے۔ ہمارے خلاف قانونی کاروائیاں ہونا ضروری ہیں تاکہ وضاحتیں ہو جائیں۔ غیر آئینی طور پر نکالنے کا فیصلہ الیکشن کمیشن اور عدالت کرسکتی ہے,خالد مقبول صدیقی کا مزید کہنا تھا کہ وہ متنازع گفتگو نہیں کرنا چاہتے۔ جب ایم کیو ایم بنی تھی تو انتخابی سیاست سے پیسوں کو دور کردیا گیا تھا