فاروق ستار نے بہادر آباد گروپ کو ایک اور موقع دے دیا۔

13 فروری 2018 (13:03)

فاروق ستار نے پھر چلا دیئے لفظوں کے وار، کہتے ہیں مسلہ ٹکٹ کا نہیں اختیار کا تھا، بات مائنس ٹو تک جا پہنچی ہے، فاروق ستار کہتے ہیں معلوم نہیں خالد مقبول کسی کا آلہ کار بن گئے ہیں،ان کا کہنا تھا کہ تنکا تنکا آشیانہ بنایا، آج بھی بہادرآباد کی رابطہ کمیٹی کو کہتا ہوں سترہ فروری سے پہلے واپس آجائیں مل کر مرکز جائینگے
نیوز کانفرنس کے دوران مئیر کراچی وسیم اختر اور فروغ نسیم بھی بننے نشانہ بنایا اور کہا کہ مئیر کراچی کے اجلاس میں اگر آدھے سے زیادہ یوسی چئینر مین بھی نا جائیں تو وسیم اختر کو بھی پی آئی بی آجانا چاِہِیئے، وسیم اختر ٹرانسفر پوسٹنگ بندھ کر دیں، پرویز مشرف کو لیڈر ماننے والے فروغ نسیم سابق صدر کیلئے راہیں ہموار کررہے ہیں
فاروق ستار کا مزید کہنا تھا کہ پتنگ کا نشان الگ نہیں ہوسکتا، اگر مجھے نکالا گیا تو کوئی بھی سربراہ تین ماہ سے زیادہ ٹک نہیں سکتا، میرے ساتھ ایک اور سیٹ کو بھی نشانہ بنایا جارہا ہے