اقامہ والی غلطی دہرائی گئی تو اس کے نتائج ہوں گے, مریم نواز

14 فروری 2018 (20:48)

آرٹیکل باسٹھ ون ایف کی سپریم کورٹ میں سماعت کے دوران مریم نواز ٹوئٹر پر متحرک رہیں، چیف جسٹس نے کیس کی سماعت کے دوران نواز شریف کے وکیل سے سوال پوچھا کہ ،، کیا کسی چور کو بھی پارٹی سربراہ بنایا جاسکتا ہے،مریم نواز نے فوری اس ٹکر کا سکرین شارٹ لیا اور ٹوئٹر پر شیئر کردیا،، ساتھ ہی لکھ دیا ، یہ الفاظ پڑھیں اور فیصلہ کریں کہ یہ بغض و انتقام نہیں تو اور کیا ہے، منصفوں کو اللہ کو بھی جواب دینا ہو گا اور عوام کو بھی، مریم نواز کا مزید کہنا تھا کہ ،، اقامہ فیصلہ تاریخِ عدل کا سیاہ ترین فیصلہ ہے جسے عوام مسترد کر چکے ہیں، اس سنگین غلطی کو دہرانا اس سے زیادہ سنگین غلطی ہو گی جس کے نتائج ہوں گے، نیب کی طرف سے ایک کے بعد ایک ضمنی ریفرنسز کا دائر کیا جانا اس بات کا ثبوت ہے کہ نہ کچھ ملا اور نہ کچھ نکلا