العزیز ریفرنس: احتساب عدالت نے کی سماعت میں استغاثہ کے گواہ واجد ضیا کو طلب کرلیا۔

Aug 15, 2018 | 16:04

اسلام آباد کی احتساب عدالت میں نواز شریف کے خلاف العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس کی سماعت ہوئی۔ تفتیشی افسر کا بیان قلمبند کیا گیا۔ تفتیشی افسر کے مطابق نواز شریف شریف خاندان کے سب سے بااثر شخص اوراہم عہدوں پر فائز رہے۔ حسن اور حسین نواز نواز شریف کے زیر کفالت تھے ان کے کوئی ذرائع آمدن نہیں تھے۔ نواز شریف نے حربے کے طور پر خاندان کے افراد کے نام شئیرز رکھنا شروع کئے۔ ملزمان نے بیرون ملک جائیداد ظاہر کی نہ ہی رقم بیرون ملک منتقل کرنے کا کوئی قانونی طریقہ بتایا۔ حسین نواز العزیزیہ اور ہیل میٹل کی ملکیت تسلیم کرتے رہے ہیں۔ ان جائیدادوں سے مریم اور حسن نواز کو مالی فوائد حاصل ہوئے ملزمان کی بتائی ہوئی منی ٹریل من گھڑت کہانی نکلی ۔ نواز شریف کا یہ موقف درست نہیں کہ انہیں ان جائیدادوں کا علم نہیں۔ یو اے ای سے آنیوالے ایم ایل اے کے جواب سے ملزمان کا موقف غلط ثابت ہوا تفتیش سے ثابت ہوتا ہے کہ نواز شریف ان اثاثوں کے مالک ہیں۔ بچوں کے ذرائع آمدن نہیں تھے وہ نواز شریف کے بے نامی دار تھے۔ عدالت نے سماعت پیر تک ملتوی کردی۔ آئندہ سماعت پراستغاثہ کے گواہ واجد ضیا کو طلب کرلیا گیا۔

مزیدخبریں