پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن کا اتحاد زیادہ دیر قائم نہ رہ سکا، پی پی نے شہباز شریف کو وزارت عظمیٰ کا ووٹ نہ دینے کا فیصلہ کرلیا

Aug 16, 2018 | 19:59

سپیکر کے انتخاب میں تحریک انصاف کے خلاف متحد ہونے والی دو بڑی جماعتوں کے راستے الگ ہوگئے، پیپلز پارٹی اور ن لیگ کے اتحاد میں شہباز شریف کی وجہ سے دراڑ آگئی، پی پی رہنما کہتے ہیں ن لیگ کو وزارت عظمیٰ کا ووٹ صرف اسی صورت دیں گے جب امیدوار تبدیل کیا جائے گا، نبیل گبول نے اس حوالے سے ایک ٹویٹ بھی کی ہے، جس میں انہوں نے کہا ہے کہ ،پیپلز پارٹی شہباز شریف کو کسی صورت ووٹ نہیں دے گی، شہباز شریف کو ووٹ دینے سے بہتر ہے کہ پیپلز پارٹی وزیر اعظم کے الیکشن کا حصہ ہی نہ بنے، دوسری جانب مسلم لیگ ن شہباز شریف کو وزیر اعظم کا امیدوار برقرار رکھنے پر بضد ہے، اور کسی صورت نیا امیدوار لانے پر رضا مند نہیں ہے، اب دیکھنا یہ ہے کہ کیا متحدہ اپوزیشن کی راہیں ابھی سے جدا ہوگئیں یا مستقبل میں دونوں بڑی سیاسی جماعتیں ایک ہوسکتی ہیں۔

مزیدخبریں