بینکنگ کورٹ کراچی نے سندھ کے میگا منی لانڈرنگ سکینڈل میں آصف زرداری کے قریبی ساتھی انور مجید اور ان کے بیٹے کا 24 اگست تک جسمانی ریمانڈ منظور کرلیا

Aug 17, 2018 | 11:53

کراچی کے بینکنگ کورٹ میں سندھ کے میگا منی لانڈرنگ اسیکنڈل سے متعلق سماعت ہوئی،،،سابق صدر آصف زرداری کے قریبی ساتھی انور مجید اور ان کے بیٹے کو عدالت پیش کیا گیا، عدالت میں ایف آئی اے پراسیکیوٹر کا کہنا تھا کہ ملزمان پر جعلی بینک اکاؤنٹس کے زریعے اربوں روپے کی منی لانڈرنگ کا الزام ہے،ملزمان سے تحقیقات کیلئے جسمانی ریمانڈ دیا جائے،انور مجید کے وکیل فاروق ایچ نائیک نے ملزمان کے جسمانی ریمانڈ کی مخالفت کی، عدالت نے ایف آئی اے کی استدعا منظور کرتے ہوئے انور مجید اور ان کے بیٹے کا چوبیس اگست تک جسمانی ریمانڈ منظور کرلیا، عدالت نے تحقیقات سے متعلق پیش رفت رپورٹ بھی طلب کرلی،نامزد ملزمہ فریال تالپور گرفتاری سے بچنے کے لیے ضمانت حاصل کرچکی ہیں،ایف آئی اے نے سابق صدر آصف زرداری سمیت بیس ملزمان کو مفرور قرار دیا تھا،انور مجید اور ان کے بیٹے غنی مجید کو سپریم کورٹ سے گرفتار کیا گیا تھا۔

مزیدخبریں