جنوبی کوریا کا جاپان کے ساتھ خفیہ معلومات کے تبادلے بارے معاہدے کی تجدید کا فیصلہ

Aug 25, 2018 | 13:39

جنوبی کوریا کی وزارت دفاع نے جاپان کے ساتھ خفیہ معلومات کے تبادلے کے سمجھوتے میں مزید ایک سال کی توسیع کا فیصلہ کرلیا ہے۔شمالی کوریا کی ایٹمی اور بیلسٹک میزائل کارروائیوں کو مدنظر رکھتے ہوئے جاپان اور جنوبی کوریا نے نومبر 2016ءمیں عسکری معلومات کی عمومی سلامتی کے معاہدے (جی ایس او ایم آئی اے ) پر دستخط کیے تھے۔اس معاہدے کی ہر سال تجدید کی جاتی ہے اور کوئی بھی رکن ملک کم از کم 90 دنوں کا پیشگی نوٹس دے کر اسے منسوخ کر سکتا ہے۔جنوبی کوریا کی وزارت دفاع کے ذرائع نے بتایا ہے کہ جزیرہ نما کوریا میں سلامتی کی صورتحال کا مکمل جائزہ لینے کے بعد وزارت نے اس معاہدے میں توسیع کا فیصلہ کیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ شمالی کوریا کو ایٹمی اسلحے سے پاک کرنے اور قیام امن کی خاطر وزارت کی رائے میں جاپان کے ساتھ تزویراتی تبادلے برقرار رکھنا ضروری ہے۔معلومات کے تبادلے کے مذکورہ معاہدے کی ابتدا پر ایسے جنوبی کوریائی شہریوں نے کڑی تنقید کی تھی جو جاپان کے ساتھ معلومات کے تبادلے کے خلاف ہیں۔ جنوبی کوریا کے صدر من جے اِن نے بھی اپنا عہدہ سنبھالنے سے قبل محتاط مﺅقف کا اظہار کیا تھا۔

مزیدخبریں