وفاقی وزیر ریلوے کا ریلوے کو اسی سال خسارے سے نکالنے اور ریلوے ملازمین کے لیے اپارٹمنٹس بنانے کا اعلان

Aug 25, 2018 | 17:29

وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید نے ریلوے کو اسی سال خسارے سے نکالنے اور 15 ستمبر سے 2 نئی ٹرینیں چلانے ریلوے ملازمین کے لیے دس ہزار اپارٹمنٹس بنانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ ریلوے کے اخراجات میں 15 فیصد کمی کی جائے گی مزید 30 ریلوے اسٹیشنوں کو اپ گریڈ کیا جائے گا ریلوے میں ساٹھ سال سے کھڑی گاڑیاں نیلام کر دی جائیں گی آن لائن ٹکٹنگ میں ٹریول ایجنٹسوں کو شامل کیا جائے گا لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شیخ رشید احمد نے کہا کہ ریلوے کی ناکارہ کوچز کو نیلام کرنے کا فیصلہ کیا ہے ریلوے میں نالائق لوگوں کے لیے کوئی جگہ نہیں ہے اب ریلوے میں کوئی کوتاہی یا نالائقی برداشت نہیں کی جائے گی اگر کسی کی ذاتی کوتاہی ہو تو ہمیں شکایت کی جا سکتی ہے ریلوے کے ای ٹکٹنگ کے نظام کو بہتر بنا رہے ہیں۔15 ستمبر سے دو نئی ٹرینیں چلائی جا رہی ہیں راولپنڈی ایک میانوالی کندیاں اور دوسری لاہور سے راولپنڈی چلائی جائیں گی ریلوے کی پانچ سالہ فنانس رپورٹ کو پبلک کی جائے گا ریلوے کے تمام ہسپتال اور سکولز نجی شعبے کی شراکت میں دیں گے ریلوے ٹریک میں بہتری لائی جائے گی 56 کلو میٹر لائن میں بہتری سے لاہور راولپنڈی کے درمیان میں سفر میں کمی ہو گی وفاقی وزیر نے کہا کہ ریلوے ملازمین کی اپ گریڈیشن کے لیے احکامات جاری کر دیئے ہیں ریلوے ملازمین کے لیے دس ہزار اپارٹمنٹس بنانے کا اعلان کر رہے ہیں ایک ہفتہ کے اندر کیرج فیکٹری کے اوقات دگنا کریں گے وزیر اعظم کے ویژن کے مطابق ریلوے کو جدید ادارہ بنایاجائے گا ریلوے کی بہتری کے لیے جتنے فنڈز ضرورت ہوں دیں گے۔ریلوے کے سپورٹس شعبے کو مزید فنڈ مہیا کریں گے قبضہ مافیا سے ریلوے کی زمینیں واگزار کروائیں گے۔ریلوے کے تین فرنٹ آفیسروں کو معطل کر دیا گیا ہے۔ریلوے کے بڑے ٹریکس کے گرد پودے لگائے جائیں گے دنیا بھر کے سرمایہ کاروں کو ریلوے کے شعبے میں خوش آمدید کہیں گے شیخ رشید نے کہا کہ ریلوے کے لیے مختص دس ارب روپے کی سبسڈی نہیں لوں گا میں ریلوے سے 37 ارب پنشن نہیں دے سکتا ہے بے شک والس مزید میں چلے جائیں۔تمام ریلوے اسٹیشنوں کے گردونواح مہنگی زمینوں کو انڈرکراس کیا جائے گا پانچ فائیو سٹار ہوٹلوں کے لیے ہمارے پاس پلاٹس موجود ہیں پندرہ روز کے اندر لاہور ریلوے اسٹیشن کو بدل کر رکھ دیں گے شیخ رشید نے کہا کہ میں نے بھی آٹھ سال سے جھوٹ بولنا چھوڑ دیا ہے چاہوں گا کہ ریلوے میں اب کوئی جھوٹ نہ بولے ریلوے کی تمام ضروریات ملک کے اندر سے ہی پوری کی جائیں گی باہر سے کچھ امپورٹ نہیں ہوگا۔

مزیدخبریں