جعلی بینک اکاؤنٹس کیس: ایف آئی اے کی رپورٹ جمع، جے آئی ٹی بنانے کی سفارش

Aug 28, 2018 | 10:31

جعلی بینک اکاؤنٹس کیس کی سماعت کے دوران وفاقی تحقیقاتی ایجنسی ( ایف آئی اے) نے اپنی رپورٹ عدالت میں جمع کرادی جس میں مشترکہ تحقیقاتی ٹیم (جے آئی ٹی) بنانے کی سفارش کی گئی ہے۔

سپریم کورٹ میں جعلی بینک اکاوئنٹس کیس کی سماعت ہوئی۔ ڈپٹی اٹارنی جنرل نے عدالت عظمی کو آگاہ کیا کہ آج جے آئی ٹی کی تشکیل کے لیے کیس مقرر ہے۔ چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ کافی وکلا موجود ہیں کیس ملتوی نہیں کر سکتے۔ ڈپٹی اٹارنی جنرل کا کہنا تھا کہ انور مجید اور عبد الغنی مجید کو گرفتار کیا گیا ہے۔ وکیل عبدالغنی مجید کا کہنا تھا کہ ان کے موکل سے وکلاء کو نہیں ملنے دیا گیا جس پر چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ عبدالغنی مجید کو وکلاء نہیں ڈاکٹرز کی ضرورت ہے۔ بڑا آدمی بیمار ہو جائے تو پورے ملک کو مصیبت پڑ جاتی ہے ڈپٹی اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ آصف علی زرداری اور فریال تالپور حفاظتی ضمانت پر ہیں۔ ڈی جی ایف آئی اے نے آگاہ کیا کہ فریال تالپور کو ٹرائل کورٹ جبکہ آصف زرداری کو ہائیکورٹ نے حفاظتی ضمانت دے رکھی ہے۔ چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ آصف زرداری اور فریال تالپور کب تک حفاظتی ضمانت پر ہیں۔ ڈی جی ایف آئی اے نے آگاہ کیا کہ آصف زرداری اور فریال تالپور تین ستمبر تک حفاظتی ضمانت پر ہیں۔ سپریم کورٹ نے عبدالغنی مجید سے وکلاء کو ملنے کی استدعا مستردکردی۔ سپریم کورٹ نے کیس کی سماعت پانچ ستمبر تک ملتوی کردی۔

مزیدخبریں