گستاخانہ خاکوں کی اشاعت پراوآئی سی کے سیکرٹری جنرل کو فوری اجلاس بلانے کا کہا ہے۔ وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی

Aug 28, 2018 | 20:00

سینیٹ اجلاس ڈپٹی چیئرمین سلیم مانڈوی والا کی زیرصدارت ہوا۔ وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا گستاخانہ خاکوں سے دنیا بھر میں ایک ارب سترکروڑ مسلمانوں کی دل آزاری ہوئی۔ آزادی رائے کی بھی کوئی حد ہونی چاہیے۔ گستاخانہ خاکوں کا معاملہ یورپی یونین میں بھی اٹھانے کا ارادہ رکھتے ہیں۔ سینیٹر کامران مائیکل نے مسیحی برادری کی جانب سے گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کی مذمت کی۔۔ ان کا کہنا تھا کہ کسی بھی نبی کی شان میں گستاخی ناقابل قبول ہے۔ اس موقع پر سینیٹر رضا ربانی کا کہنا تھا کہ امریکی وزیر خارجہ کو اجازت نہیں دیں گے کہ وہ وزیراعظم کو ڈومور کہے۔ ہم نے دہشت گردی کیخلاف جنگ میں جانیں دیں۔ ہماری معیشت کو نقصان ہوا، کسی صورت ڈکٹیشن قبول نہیں کریں گے۔۔وزیرخزانہ اسدعمر کا سینیٹ میں کہنا تھا آئی ایم ایف کے حوالے سے امریکی بیان غیر ضروری تھا۔ فی الحال آئی ایم ایف سے رجوع کرنے کا پروگرام نہیں۔ این ایف سی ایوارڈ کمشن کے اجرا کا پراسیس جلد شروع کریں گے۔

مزیدخبریں